Wp/khw/ظفر اقبال (شاعر)

From Wikimedia Incubator
< Wp‎ | khwWp > khw > ظفر اقبال (شاعر)
ظفر اقبال
آژیک میاں ظفر اقبال
27 ستمبر 10932(1932-09-27)
بہاولنگر ، صوبہ پنجاب (برطانوی ہند) (موجودہ (پاکستان)
ادبی نام ظفر
پیشہ شاعر، کالم نگار
ملک پاکستان کا پرچمپاکستانی
قومیت پنجابی
تعلیم بی اے، ایل ایل بی
یونیورسٹی گورنمنٹ کالج لاہور، پنجاب یونیورسٹی
اصناف غزل، نظم، کالم
نویوکو کوروم آب رواں
اطراف
عیب و ہنر
وہم وگمان
ایوارڈ و اعزازات صدارتی اعزاز برائے حسن کارکردگی
آژیلی آفتاب اقبال

ظفر اقبال (انگریزی: Zafar Iqbal)، (پیدائش: 27 ستمبر، 1932ء) پاکستانو معروف شاعر اوچے کالم نگار آسور۔ وا ھورو ژاو آفتاب اقبال معروف ٹی وی اینکر آسور۔

کتاب[edit | edit source]

  • خشت زعفران
  • اطراف
  • آب رواں
  • عیب و ہنر
  • ہرے ہنیرے

اعزازات[edit | edit source]

حکومت پاکستان ھورو ادبی خدماتن اعترافہ ھوتے صدارتی اعزاز برائے حسن کارکردگی دیتی آسور۔

نمونۂ کلام[edit | edit source]

غزل

کچھ اور ابھی ناز اٹھانے ہیں تمہارے دنیا یہ تمہاری ہے، زمانے ہیں تمہارے
باتیں ہیں تمہاری جو بہانے ہیں تمہارے اسلوب تو یہ خاص پرانے ہیں تمہارے
ویرانۂ دل سے تمہیں ڈر بھی نہیں لگتا حیرت ہے کہ ایسے بھی ٹھکانے ہیں تمہارے
آنا ہے بہت دور سے ہم نے تری جانباور، باغ یہیں چھوڑ کے جانے ہیں تمہارے
ہر وقت یہاں خاک ہی اڑتی ہے شب و روز دریا انہی صحراؤں میں لانے ہیں تمہارے
ہوتا، ظفر، ان میں جو کوئی رنگِ حقیقت ویسے تو سبھی خواب سہانے ہیں تمہارے [1]

غزل

جس نے نفرت ہی مجھے دی نہ ظفرؔ پیار دیامیں نے سب کچھ اسے کیوں ہار دیا وار دیا
اک نظر نصف نظر شوخ نے ڈالی دل پراور اس دشت کو پیرایۂ گلزار دیا
وقت ضائع نہ کرو ہم نہیں ایسے ویسےیہ اشارہ تو مجھے اس نے کئی بار دیا
زندہ رکھتا تھا مجھے شکل دکھا کر اپنیکہیں روپوش ہوا اور مجھے مار دیا
زردیاں ہیں مرے چہرے پہ ظفرؔ اس گھر کیاس نے آخر مجھے رنگ در و دیوار دیا [2]

غزل

خامشی اچھی نہیں، انکار ہونا چاہیے اور یہ تماشا اب سرِ بازار ہونا چاہیے
بات پوری ہے اُدھوری چاہیے اے جانِ جاناں کام آساں ہے اسے دشوار ہونا چاہیے
دوستی کے نام پر کیجیے نہ کیونکر دشمنی کچھ نہ کچھ آخر طریقہ کار ہونا چاہیے
جھوٹ بولا ہے تو قائم بھی رہو اُس پر ظفر آدمی کو صاحب ِ کردار ہونا چاہیے ​[3]

حوالہ جات[edit | edit source]