Wp/khw/سلیمان اشہرو غزل

From Wikimedia Incubator
< Wp‎ | khwWp > khw > سلیمان اشہرو غزل
Jump to navigation Jump to search

غزل

تو تن ارمانہ مہ حالاوے

گل و گلشانہ مہ حالاوے

ای تماشہ ہوتم جہانہ

کیہ ہش ناشہ ہوتم جہانہ

الوس پچھانہ مہ حالاوے

تو تن ارمانہ مہ حالاوے

وعدہ ِ فردا کہ عجیب تہ

مہ سوم وفا کہ عجیب تہ

عہدوپیمانہ مہ حالاوے

تو تن ارمانہ مہ حالاوے

عشقو شوڑبٹیہ تہ فراق ہوئے

ہجرو تے چھویہ مہ اُتاق ہوئے

وصلو جہانہ مہ حالاوے

تو تن ارمانہ مہ حالاوے

قدر الفتو کو اے مہ حسینہ

انواز ووری انگوئے نسیمہ

تن سوم چمانہ مہ حالاوے

تو تن ارمانہ مہ حالاوے

موبوس کافر تو مہ الفتہ

اقرار آخر بیلی محبتہ

ہورو پنہانہ مہ حالاوے

تو تن ارمانہ مہ حالاوے

اوا آرزو کہ تہ سم غیچہ

وا ای اشرو کہ سم غیچہ

چھاریئے اوانہ مہ حالاوے

تو تن ارمانہ مہ حالاوے

اوا اشہر نو، تو اشہر ہوؤ

بحرِ الفتہ کہ گوہر ہوؤ

غیردوم غیرنانہ مہ حالاوے

تو تن ارمانہ مہ حالاوے